• درخواست دہندہ شیعہ اثناء عشری ہو۔
  • دنیاوی تعلیم میٹرک ہو۔
  • کسی متعدی مرض کا شکارنہ ہو۔ ذہنی و جسمانی صحت و کیفییت مدرسہ میں قیام و تعلیم کے لئے موزوں ہو۔
  • پہلی کلاس میں داخلہ کے لئے عمر 15 سال سے زائد نہ ہو۔
  • کسی مدرسہ سے تادیبی طور پر نکالا نہ گیا ہو۔
  • درخواست دہندہ کے خلاف کوئی فوجداری مقدمہ درج نہ ہو۔ کسی مقدمہ میں ملوث ہونے کی صورت میں ایک الگ بیان میں مقدمہ کی نوعیت کی وضاحت کرناہو گی۔ اس بیان کی مقامی ذمہ دارافراد سے تصدیق و چھان بین کے بعد داخلہ کو فیصلہ کیا جائے گا۔

مندرجہ بالا شرائط کے حامل افراد، داخلہ کے مقررہ ایام میں دفتری اوقات کار میں جامعہ کے دفتر سے داخلہ فارم حاصل کریں۔ اور صحیح و خوشخط پر کریں۔ ذاتی کوائف (نام، ولدیت،پیدائش) شناختی کارڈ یا "ب فارم" وغیرہ کے مطابق درج کریں۔

  • تین عدد تصاویر جو 6 ماہ سے زائد پرانی نہ ہوں۔
  • شناختی کارڈ یا "ب فارم" کی مصدقہ فوٹو کاپی۔
  • سکول، کالج دیگر متعلقہ ادارہ کا سرٹیفیکیٹ۔
  • مقامی یا قریبی شیعہ عالم دین سے درخواست دہندہ کے شیعہ ہونے اور اچھے چال چلن کے مالک ہونے کا تصدیق نامہ۔
  • کسی دینی مدرسہ سے آنے والے کے لئے متعلقہ مدرسہ کا داخلہ کے لئے عدم اعتراض سرٹیفیکیٹ (کہ سابقہ مدرسہ کو جامعہ میں داخل ہونے پر کوئی اعتراض نہیں۔
  • والد یا سر پرست کی طرف سے مدرسہ میں داخل ہونے کا تحریری اجازت نامہ۔ امیدوار جامعہ کے دفتر کے توسط سے شعبہ داخلہ کے انچارج سے ٹیسٹ /انٹرویو کے لئے وقت لے گا اور مقررہ وقت پر تمام دستاویزات کے ہمراہ انٹرویو کے لئے حاضر ہوگا۔ امیدوار کا جامعہ کے مقررہ ڈاکٹر سے طبی معائنہ ہو گا صحت کے تسلی بخش ہونے کی صورت میں داخلہ کی مزید کاروائی ہو گی۔ داخلہ کے تمام مراحل میں امیدوار فقط جامعہ کے دفتر سے رابطہ رکھے گا اجازت کی صورت میں مہمان خانہ میں قیام کرے گا۔ ہاسٹل و جامعہ کے دیگر شعبہ جات میں جانے کی اجازت نہ ہو گی۔ درخواست داخلہ قبول ہونے کی صورت میں امیدوار سیکورٹی فیس مبلغ 250 روپے بینک اکاؤنٹ میں جمع کرائے گا اور رسید داخلہ فارم کے ساتھ لف کرے گا۔ (بینک اکاؤنٹ نمبر14-2368 حبیب بینک لمیٹڈ DPS برانچ ماڈل ٹاؤن لاہور)

:ضروری وضاحت

جامعہ کسی بھی امیدوار کی داخلہ کی درخواست قبول کرنے یا وجہ بتائے بغیر مسترد کرنے کا حق محفوظ رکھتا ہے۔ داخلہ دو ماہ کیلئے عارضی طور پر ہو گا جس میں طالب علم کی کاکردگی و سیرت کا جائزہ لینے کے بعد داخلہ برقرار رکھنے یا ختم کرنے کا فیصلہ کیا جائے گا۔ داخلہ منظور ہونے کی صورت میں جامعہ کی طرف سے یہ سہولیات مفت مہیا ہوں گی : غذا، نصابی کتب، چارپائی، طبی معائنہ و ابتدائی طب امداد۔ اس کے علاوہ دیگر روزمرہ کی ضروریات فراہم کرنا طالب علم کی اپنی ذمہ داری ہوگی۔ داخلہ کے کچھ عرصہ بعد قواعد کے مطابق مناسب مقررہ وظیفہ بھی دیا جائے گا۔ غیر ملکی طلباء کیلئے داخلہ و قیام کی صورت میں جامعہ کی شرائط و قواعد کے علاوہ پاکستان کے مقررہ قواعد کی پابندی بھی لازمی ہوگی۔

جن امیدوار کا داخلہ باضابطہ طور پر منظور ہو جائے انہیں جامعہ میں قیام و تعلیم کیلئے درج ذیل قواعد و ضوابط کی پابندی کرنا لازم ہوگی۔

  • جامعہ کے تعلیمی، تدریسی، تربیتی نظام الاوقات کے تقاضوں کے مطابق تعطیلات کے علاوہ طالب علم کا مستقل قیام (شب و روز) جامعہ میں ہونا ضروری ہے۔
  • تمام شرعی واجبات کی پابندی لازمی ہوگی اور اہم مستحبات کی بجا آوری کی کوشش کرنا ہو گی۔
  • چال چلن، گفتارو کردار، سیرت و صورت کو بہترین اسلامی آداب میں ڈھالنے کی کوشش کرنا ہوگی
  • تعلیمی،تدریسی تربیتی پروگرام ۔ انتظامی و تدریسی نظام الاوقات و انتظامی قواعد و ضوابط کی پابندی لازمی ہوگی جن میں وقتاَ فوقتاَ ضروری تبدیلیاں ہو سکتی ہیں۔
  • کلاس،کمرے اور ادارہ کے کسی ساتھی یا ملازم سے کسی قسم کی شکایت کی صورت میں کلاس یا ہوسٹل انچارج سے رابطہ کیا جائے کسی دوسرے طالب علم یا ادارہ کے کسی فرد سے بدتمیزی وغیرہ اور غیر اخلاقی حرکت کا ارتکاب ثابت ہونے کی صورت میں پہلی مرتبہ مناسب سزا کے ساتھ تنبیہ کی جائے گی۔ دوبارہ خلاف ورزی کرنے پر دیگر ضروری تادیبی کاروائی کے علاوہ مدرسہ سے فوری طور پر خارج کر دیا جائے گا۔
  • اساتذہ و علماء کرام کا احترام دینی تربیت کا جزو لازم ہے کسی بھی استاد کے ساتھ خلاف ادب رویہ اپنانے پر فوری تادیبی (حسب ضرورت قانونی) کاروائی ہو گی اور فی الفور مدرسہ سے خارج کر دیا جائے گا۔
  • لباس، جسم،کمرہ کلاس روم ماحول وغیرہ کی صفائی ہر طالب علم کا بنیادی فریضہ ہو گا۔
  • ششماہی،سالانہ امتحان میں مکمل ناکامی کی صورت میں فوری طور پر نام خارج کر دیا جائے گا۔
  • جامعہ میں طالب علم کو کسی انجمن،یونین یا تنظیم سازی کی اجازت نہ ہو گی اور نہ ہی جامعہ سے باہر کسی سیاسی، فلاحی یا دیگر تنظیم کا عہدیدار بننے کی اجازت ہوگی۔
  • کسی بھی قسم کا اسلحہ،تیز دھارآلہ جامعہ کی حدود میں طالب علم کے پاس ہونا ممنوع ہے۔ اسی طرح اس کے سامان کمرہ وغیرہ میں کسی ایسی شے کا پایا جانا بھی قابل گرفت ہو گا جو قانوناَ،اخلاقاَ، شرعاَ نامناسب سمجھی جاتی ہو۔ہوسٹل میں طلباء کےکمروں اور سامان کی وقتاَ فوقتاَ تلاشی لی جا سکتی ہے۔
  • تدریسی اوقات میں مقررہ یونیفارم پہننا ضروری ہو گا۔
  • جامعہ سے باہر فقط مقررہ اوقات میں جانے کی اجازت ہوگی اسکےعلاوہ مجبوری کی صورت میں فقط مجاز شخصیت کی تحریری اجازت سے باہر جانے کی اجازت ہو گی۔
  • جامعہ کی عمارت کے کسی حصے، سامان اور املاک کو عمداَ نقصان پہنچانے کی صورت میں نقصان کی ادائیگی اور جرمانہ کے ساتھ تادیبی /قانونی کاروائی بھی کی جاسکتی ہے۔
  • دوران قیام و طالب علمی جامعہ کی باضابطہ اجازت و نامزدگی کے علاوہ طالب علم کو مومنین،کسی بھی علاقے،مسجد،امام بارگاہ دینی مراکز یا کسی بھی تنظیم سے رابطہ کی صورت میں خود کو بطور جامعہ کا نمائندہ متعارف کرانے کی اجازت نہ ہو گی اور نہ جامعہ کے نام پر کسی قسم کا عطیہ،چندہ وصول کرنے کی اجازت ہوگی۔
  • ذکر معصومین کے علاوہ ہر قسم کے سرکاری،غیر سرکاری پروگراموں، سیاسی و دیگر جلسے،جلوسوں،اخبارات،ریڈیو،ٹی وی وغیرہ کے لئے کسی بھی قسم کے پروگراموں میں شرکت سے قبل جامعہ سے باضابطہ اجازت لینا ہو گی۔
  • کسی بھی قسم کے مواد کی طباعت و نشر و اشاعت اخبارات و جرائد میں کسی بھی مضمون ،کالم یا بیان دینے سے قبل جامعہ کی انتظامیہ سے اجازت لینا ہو گی اور متعلقہ مواد کی اپنے دستخط والی کاپی دفتر میں جمع کرانا ہو گی۔
  • جامعہ میں قیام کے دوران طالب علم کے خلاف کسی بھی قسم کے فوجداری مقدمہ کے اندراج کی صورت میں اسے انتظامیہ کو ممکنہ طور پر جلد از جلد آگاہ کرنا ہوگا،جامعہ کی انتظامیہ ضروری تحقیق اور چھان بین کے بعد داخلہ برقرار رکھنے یا منسوخ کرنے کا فیصلہ کرے گی۔

جامعہ میں سال بھر میں مختلف مناسبتوں سے پانچ ماہ سے زائد تعطیلات ہوتی ہیں۔جن کی تفصیل درج ہے لہزا بہتر ہے کہ طالب علم مزید تعطیل کی درخواست نہ کرے۔

  • تعطیل نہ کرنا یا کم کرنا طالب علم کی اچھی کارکردگی شمار ہو گی ۔ نہایت مجبوری میں معقول جوازپیش کرنے پر کم سے کم رخصت دی جائے گی جواز رخصت کے عدم ثبوت کی صورت میں رخصت منسوخ تصور ہو گی اور غلط بیانی پر ضروری تادیبی کاروائی کی جائے گی۔
  • منظور شدہ رخصت میں توسیع فقط انتہائی مجبوری کی حالت میں معقول جواز پیش کرنے اور ثابت ہونے کی صورت میں ہو سکے گا۔
  • بوجہ بیماری،رخصت فقط جامعہ کے مقررہ ڈاکٹر کی تصدیق پر ہو گی یہی ضابطہ اس قسم کی رخصت کی توسیع کے بارے میں ہو گا۔
  • بوجہ بیماری رخصت کا عرصہ اگر طالب علم کی تعلیمی استعداد کو زیادہ متاثر کرنے کا باعث ہوا تو اسے عارضی طور پر خارج کر دیا جائے گا صحت یابی کے بعد طبی معائنہ میں تسلی بخش ہونے کی صورت میں داخلہ بحال کیا جائے گا۔
  • بغیر تحریری منظور شدہ رخصت یا مجبوری کی صورت میں فون،فیکس،ای میل،تاریاخط کےذریعہ اطلاع دیئے بغیر تین مسلسل غیر حاضریوں کے بعد نام خارج کر دیا جائے گا۔ تاہم غیر حاضری کا معقول عذر پیش کرنے اور ثابت ہونے پر غیر حاضری رخصت میں تبدیل ہو سکے گی۔

نمبرشمار

  تاریخ

    ماہ

                     مناسبت

  تعداد

1

1 تا 13

محرم الحرام

عزاداری شہدا کربلا علیہ السلام

13 دن

2

25

محرم الحرام

شہادت حضرت امام زین العابدین علیہ السلام

1 دن

3

20

صفرالمظفر

چہلم شہداء کربلا علیھم السلام

1 دن

4

28

صفرالمظفر

وفات رسول خداو شہادت امام حسن علیہ السلام

1 دن

5

8

ربیع الاول

شہادت حضرت امام حسن عسکری علیہ السلام

1 دن

6

17

ربیع الاول

ولادت رسول خداو امام جعفر صادق علیہ السلام

1 دن

7

3

جمادی الثانی

شہادت سیدہ فاطمتہ الزہرا

1 دن

8

20

 جمادی الثانی

ولادت سیدہ فاطمتہ الزہرا

1 دن

9

3

رجب المرجب

شہادت حضرت امام علی نقی علیہ السلام

1 دن

10

13

رجب المرجب

ولادت امیر المومنین علیہ السلام

1 دن

11

25

رجب المرجب

شہادت حضرت امام موسی کاظم علیہ السلام

1 دن

12

27

رجب المرجب

عید بعثت

1 دن

13

3

شعبان

ولادت حضرت امام حسین علیہ السلام

1 دن

14

15

شعبان

ولادت امام مہدی علیہ السلام

1 دن

15

15

رمضان المبارک

ولادت امام حسن مجتبی علیہ السلام

1 دن

16

19

رمضان المبارک

یوم ضربت حضرت علی علیہ السلام

1 دن

17

21

رمضان المبارک

شہادت حضرت امیر المومنین علیہ السلام

1 دن

18

23

رمضان المبارک

بسلسلہ شب قدر

1 دن

19

1،2

شوال المکرم

عید الفطر

2 دن

20

15

شوال المکرم

شہادت حضرت امام جعفر صادق علیہ السلام

1 دن

21

23

ذیقعدہ

شہادت حضرت امام علی رضا علیہ السلام

1 دن

22

29

ذیقعدہ

شہادت حضرت امام علی تقی علیہ السلام

1 دن

23

7

ذی الحجہ

شہادت امام محمد باقر علیہ السلام

1 دن

24

9

ذی الحجہ

شہادت حضرت مسلم بن عقیل علیہ السلام

1 دن

25

10،11

ذی الحجہ

عید الا ضحی

2 دن

26

18

ذی الحجہ

عید غدیر

1 دن

27

24

ذی الحجہ

عید مباہلہ

1 دن

28

یوم آزادی

14 اگست

14 اگست

1 دن